پولیس ایپ گوگل ایپ اسٹور سے غائب ہوگئی ، اسے نئے سال کا تحفہ بتایا گیا


کراچی: گذشتہ سال کراچی پولیس کے ذریعہ آن لائن پولیس کی درخواست (ایپ) کی تعریف کی جانے والی پولیس اپنے قدمن سے دعوے کرنے میں ناکام رہی ، شہر کی عوام کی شکایات اور شکایات کا کوئی سراغ لگائے بغیر غائب ہو گیا۔

’پولیس 4 یو‘ کے نام سے یہ ایپ کراچی پولیس کے اس وقت کے ایڈیشنل آئی جی (اے آئی جی) ڈاکٹر عامر احمد شیخ نے 2019 میں کراچی کے عوام کو پولیس سے رجوع کرنے کے لئے ایک آن لائن ایونیو فراہم کرنے کے لئے لانچ کیا تھا اور اس کی بڑائی کی تھی۔

اس کی شروعات پولیس نے کلفٹن کے سلیم واحدی آڈیٹوریم میں منعقدہ ایک تقریب میں کی تھی جہاں اے آئی جی ڈاکٹر عامر احمد شیخ نے خود اس کا اعلان کیا تھا۔ تاہم ، لانچ کی تقریب میں شاید ہی ایک سال تک ایپ نہ صرف معطل ہوئی بلکہ وہ غائب ہوگئی۔

موصولہ اطلاعات کے مطابق ، میٹروپولیس میں پولیس نے اپنی شکایات درج کرنے کی بات کی تو عوام کو اطمینان بخش بنانے کے لئے ایک ایپ تیار کی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ پولیس کی یہ کوشش تھی کہ لوگوں کے لئے عوام دوست امیج کھڑا کیا جائے۔

ایپ کا مقصد عوام کے لئے تیز رفتار رسپانس ایونیو رکھنا تھا جہاں وہ کسی بھی جرم یا جرم کی رپورٹ درج کرسکتے تھے۔ اگر کسی وجہ سے ایپ نے کام کرنا چھوڑ دیا تو ایپ نے واٹس ایپ نمبر بھی فراہم کیا۔ تاہم ، اب کہ واٹس ایپ رابطہ نمبر بھی غلط ہوگیا ہے۔

پڑھیں: گھریلو ملازموں کے مجرمانہ ریکارڈ کی تصدیق کے لئے پولیس ایپ: ایس ایس پی ساؤتھ

تب یہ فخر کیا گیا تھا کہ اس ایپ کی مدد سے کسی بھی ملک سے تعلق رکھنے والے تمام قونصل خانوں اور سفارت خانوں اور شہریوں کو اپنی شکایات پر ’سیکنڈ‘ کے اندر پولیس کی مدد حاصل ہوگی۔

واضح رہے کہ اے آئی جی کی جانب سے اس ایپلی کیشن کو کراچی والوں کے لئے نئے سال کے تحفہ کے طور پر ڈب کیا گیا تھا ، لیکن اب نہ صرف یہ ایپ کارگر نہیں ہے ، یہ گوگل ایپ اسٹور پر بھی نہیں مل سکتی ہے۔

تبصرے

تبصرے

. (tagsToTranslate) کراچی پولیس (ٹی) ایپ (ٹی) گوگل ایپ (ٹی) غائب (ٹی) قونصل خانہ



Source link