مسلم لیگ ن نے سندھ ضمنی انتخابات میں پیپلز پارٹی کے امیدواروں کی حمایت کا اعلان کیا


کراچی: پاکستان مسلم لیگ نواز نے بدھ کے روز اعلان کیا ہے کہ وہ سندھ میں آئندہ ضمنی انتخابات میں پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے امیدواروں کی حمایت کرے گی جہاں پی پی پی اور جی ڈی اے کے مابین گردن اور گردن مقابلہ متوقع ہے۔

یہ اعلان کراچی میں منعقدہ پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن) کے امیدواروں کی مشترکہ پریس کانفرنس میں کیا گیا۔

اس موقع پر پیپلز پارٹی کے رہنما نثار کھوڑو نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکمران پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے پچھلے دو سالوں میں ملک کو تباہ کیا ہے اور وہ یہ تصور بھی نہیں کرسکتے ہیں کہ تحریک انصاف کی حکومت کے باقی تین سالوں میں کیا ہوگا۔

اس موقع پر مسلم لیگ ن کے رہنما محمد زبیر عمر نے ملک میں بڑھتی افراط زر ، بے روزگاری اور غربت پر وفاقی حکومت کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا۔

مسلم لیگ (ن) سندھ چیپٹر کے صدر شاہ محمد شاہ نے کہا کہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ سندھ میں مسلم لیگ (ن) کے تمام حامی آئندہ ضمنی انتخابات میں پیپلز پارٹی کے امیدواروں کو ووٹ دیں گے۔

مزید پڑھ: ای سی پی نے سندھ اسمبلی کی خالی نشستوں پر ضمنی انتخابات کا شیڈول جاری کردیا

ای سی پی کے مطابق پی ایس 52-عمرکوٹ ضمنی انتخاب کے لئے پولنگ 18 جنوری کو ہوگی جبکہ پی ایس 43 سانگھڑ اور پی ایس 88 ملیر میں ضمنی انتخاب 16 فروری کو ہوگا۔

سابق وزیر اعلی ، ارباب غلام اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے امیر علی شاہ پی ایس 52-عمرکوٹ نشست پر انتخاب لڑ رہے ہیں جو پیپلز پارٹی کے ایم پی اے علی مردان شاہ کی موت کی وجہ سے خالی ہوئی تھی۔

یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ ایم کیو ایم-پی کے وفد نے گذشتہ ہفتے گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس (جی ڈی اے) کے رہنما اور سابق وزیر اعلی سندھ ارباب غلام رحیم سے ملاقات کی تھی اور آئندہ کے پی ایس 52 عمرکوٹ ضمنی انتخاب میں انہیں بھرپور تعاون کا یقین دلایا۔

تبصرے

تبصرے



Source link